کیا یسوع مسیح کی قیامت سچ ہے؟




سوال: کیا یسوع مسیح کی قیامت سچ ہے؟

جواب:
اقتباس فیصلہ کُن گواہی پیش کر تے ہیں کہ یسوع مسیح درحقیقت مُردوں میں سے جی اُٹھا ۔ مسیح کی قیامت متی 28 : 1 ۔ 20 ، مرقس 16 : 1 ۔ 20 ، لوقا 24 : 1 ۔ 53 ، اور یوحنا 20 : 1 ۔ 21 : 25 میں قلمبند ہے۔ مسیح کی قیامت اعمال کی کتاب میں بھی آشکارہ ہوتی ہے ( اعمال 1 : 1 ۔ 11 ) اِن اقتباسات سے آپ بہت سے " ثبوت " حاصل کر سکتے ہیں ، پہلے شاگردوں میں ڈرامائی تبدیلی ہے ۔ وہ خوفزدہ آدمیوں کے گروہ میں چلے گئے اور مضبوط ، جُرات مند گواہی کی انجیل کو پوری دُنیا میں بانٹنے کو چھُپایا ۔ اور کسے مسہح کے اُن پر ظاہر کیے جانے کے علاوہ ڈرامائی انداز میں تبدیل کیا جا سکتا ہے ؟

دوسرے پولس رسول کی زندگی میں ۔ کس نے کلیسیا میں رسول کلیسیا میں ایذار سانی سے اپنے آپ کو تبدیل کیا ؟ یہ تھا جب جب مسیح نے اُس پر دمشق کی راہ پر ظاہر کیا ( اعمال 9 : 1 ۔ 6 ) ۔ تیسرا قاءل کرنے والا ثبوت خالی قبر ہے ۔ اگر مسیح زندہ نہ ہوتا ، پھر اُس کا بدن کہاں ہے ؟ شاگردوں اور دوسروں نے قبر کو دیکھا جہاں وہ دفن تھا ۔ جب وہ واپس آئے، اُس کا بدن وہاں نہیں تھا فرشتوں نے بیان کیا کہ وہ مُردوں میں سے جی اُٹھا جیسے وعدہ کیا گیا تھا ( متی 28 : 5 ۔ 7 ) ۔ چوتھے ، اُس کی قیامت کی اضافی گواہی یہ ہے کہ بہت سے لوگوں پر وہ ظاہر ہوا ( متی 28 : 5 ، 9 ، 16 ۔ 17 ، مرقس 16 : 9 ، لوقا 24 : 13۔ 35 ، یوحنا 20 : 19 ، 24 ، 26۔ 29، 21 : 1 ۔ 14 ، اعمال 1 : 6 ۔ 8 ، 1 کرنتھیوں 15 : 5 ۔ 7 )۔

یسوع کے جی اُٹھنے کا ایک اور ثبوت وزن کی بڑی مقدار ہے جسے شاگردوں ے یسو ع کی قیامت پر دیا ۔ یسوع کی قیامت پر کُلیدی اقتباس 1 کرنتھیوں 15 ہے ۔ اِس باب میں ، پولس رسول وضاحت کرا ہے کہ کیوں اِسے سمجھنااور مسیح کی قیامت پر یقین کرنا مشکوک ہے ۔ قیامت مندرجہ ذیل وجوہات کے لیے اہم ہے :1) ۔ اگر مسیح مُردوں میں سے زندہ نہ ہوتا ، ایماندار نہ ہو تے ( 1 کرنتھیوں 15 : 12 ۔ 15 ) ۔ 2 ( اگر مسیح مُردوں میں سے زندہ نہ ہوتے ، گناہ کے لیے اُس کی قُربانی کافی نہ ہوتی ( 1 کرنتھیوں 15 : 16 ۔ 19 ) یسوع کی قیامت نے یہ ثابت کیا کہ اُس کی موت کو ہمارے گناہ کے کفارے کے طور پر خدا کی طرف سے قبول کیا گیا تھا ، اگر وہ سادہ طرح مرتا اور مُردہ ہی رہتا ، اِس نے اشارہ کرنا تھا کہ اُس کی قُربانی کافی نہ تھی نتےجے کے طور پر م ایمانداروں کو اُن کے گناہوں سے معاف نہیں کیا جانا تھا ، او ر وہ مرنے کے بعد مُردہ ہی رہتے ۔ ( 1 کرنتھیوں 15 : 16 ۔ 19 ) ۔ یہاں ابدی زندگی کے طور پر ایسی چیز نہ ہو تی ( یوحنا 3 : 16 ) ۔ لیکن فی لحقیقت مسیح مُردوں میں سے جی اُٹھا ہے اور جو سو گئے ہیں اُن میں پہلا پھل ہوا ۔ " ( 1 کرنتھیوں 15 : 20 این اے ایس )۔

آخر کار ، کلام واضح ہے کہ وہ سب جو یسوع مسیح پر ایمان رکھتے ہیں وہ ابدی زندگی کے لیے جی اُٹھیں گے جیسے وہ جی اُٹھا تھا ( 1 کرنتھیوں 15 : 20 ۔ 23 ) ۔ پہلا کرنتھیوں 15 یہ بیان کرنا جاری رکھتا ہے کہ کیسے مسیح کی قیامت گناہ پر اُس کی فتح کو ثابت کر تی ہے اور ہمیں گناہ پر فتح کے طور پر زندہ رہنےکے طاقت دیتی ہے ( 1 کرنتھیوں 15 : 35 ۔ 49 )۔ یہ جی اُتھے بدن کی جلالی فطرت کو بیان کر تی ہے جسے ہم حاصل کریں گے ( 1 کرنتھیوں 15 : 35 ۔ 49 ) ۔ یہ اعلان کر تی ہے کہ ، یسوع کی قیامت کے نتیجہ کے طور پر ، وہ سب جواُس پر ایمان رکھتے ہیں وہ موت پر حتمی فتح رکھتے ہیں ( 1 کرنتھیوں 15 : 50 ۔ 58 ) ۔

مسیح کی قیامت کتنی جلالی فتح ہے !" پس اے میرے عزیز بھائیو ! ثابت قدم اور قائم رہو او ر خداوند کے کام میں ہمیشہ افزائس کر تے رہو کیونکہ یہ جانتے ہو کہ تمہاری محنت خداوند میں بے فائدہ نہیں ہے ۔ " ( 1 کرنتھیوں 15 : 58 ) ۔ بائبل کے مطابق ، یسوع مسیح کی قیامت بہت سچ ہے ۔ بائبل مسیح کی قیامت کو قلمبند کر تی ہے ، قلمبند کر تی ہے کہ اِس کی 400 سے زائد لوگوں سے گواہی دی گئی ، اور یسوع کی قیامت کی تاریخی حقیقت پر مشکوک مسیحی تعلیم کو بنانے کا عمل کرتی ہے ۔



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



کیا یسوع مسیح کی قیامت سچ ہے؟