میں روُح القدس کے ساتھ کس طرح بھر سکتا ہوں ؟




سوال: میں روُح القدس کے ساتھ کس طرح بھر سکتا ہوں ؟

جواب:
رُوح اُلقدس کے ساتھ بھرنے کو سمجھنے کے لیے یوحنا 14:16 آیت ایک اہم آیت ہے، جہاں یسوع نے وعدہ کیا کہ روُح ایمانداروں میں انڈیلی جائے گی اور یہ انڈیلنا مستقل ہو گا۔ یہ رُوح سے بھرے جانے سے انڈیلا جانا ممتاز ہے ۔ مستقل طور پر رُوح کا انڈیلا جانا چُنے ہوئے ایمانداروں کے لیے ایک انتخاب نہیں ہے ۔ بلکہ تمام ایمانداروں کے لیے ہے ۔ کلام میں بہت سارے حوالے ہیں جو اِس نتیجہ کی معاونت کرتے ہیں ۔

پہلا، میسح میں تمام ایمانداروں کو بغیر کسی زبانی قانون کے روح القدس کا تحفہ دیا ہے ، اور مسیح میں ایمان رکھنے کے سوا کوئں شرط اِس تحفے پر نہیں رکھی جاتی ہے ۔ (یوحنا 39-7:37) ۔ دُوسرا رُوح القدس نجات کے وات دیا جاتا ہے ۔ (افسیوں 1:13) گلتیوں 3 باب اُس کی 2 آیت بالکل اِسی طرح کی سچائں پر زور دتی ہے، یہ کہتے ہوئے کہ روح کا انڈیلا جانا ایمان لانے کے وقت وقوؑ پذیر ہوتا ہے ۔ تیسرا روُح القدس ایمانداروں میں مستقل طور پر رہتی ہے ۔ روُح القدس ایمانداروں کو ایک پیشگی کے طور پر دیا جاتا ہے ۔ یا مسیح میں ان کی مستقبل کی عظمت کی تصدیق کے لیے دیا جاتا ہے ۔ (11 کرنتھیوں 1:22، افیسوں 4:30) ۔

یہ روح القدس کے بھرے جانے کے مقابلے میں ہے جس کا حوالہ افسیوں 5:18 میں دیا گیا ہے۔ ہمیں مکمل طور پر روح القدس لینا چاہیے جو کہ وہ ہمیں مکمل طور پر بھر دے اس تناظر میں مکمل بھر دے ۔ رومیوں 8:9 اور افیسوں 14-1:13 آیت بیان کرتیں ہیں کہ وہ ہر ایماندار میں رہتا ہے ، لیکن وہ رنجیدہ ہو سکتا ہے ۔ (افسیوں 4:30) اور ہم میں اُس کا یہ کام بجھ بھی سکتا ہے ۔ (1 تھسلنیکیوں 5:19) ۔ جب ہم اِیسا ہونے کی اجازت دیتے ہیں تو ہم روح کے بھر جانےاور ہم میں اُس کی قوت اور ہم میں اُس کی قوت کا تجربہ نہیں کرتے ہیں ۔ روح القدس سے بھرے جانے اُسے ہماری زندگیوں کے ہر حصے پر ہمیں راستہ دکھانے، اور کنڑول کرنے کے لیے مکمل اختیار ہو جاتا ہے، تب اُس کی قوت ہمارے وسیلہ سے جدوجہد کرتی ہے ۔ تاکہ ہم جو کریں وہ خُدا کے اچھا ہو۔ روح القدس سے بھرنا ظاہری اعمال پر ہی لاگو نہیں ہوتا ہے، بلکہ یہ ہمارے باطنی خیالات اور ہمارے اعمال کی تحاریک پر بھی لاگو ہوتا ہے ۔ زبور 19:14 آیت کہتی ہے ، میرے منُہ کا کلام اور میرے دل کا خیال تیرے حضور مقبل ٹھہرے ۔ اے خداوند! اے میری ثتان اور میرے جذبہ دینے والے!

گُناہ روح القدس کے بھرے جانے میں رکاوٹ ہے، اور خُدا کی تابعداری یہ ہے کہ کس طرح روح کے بھرے جانے کو برقرار رکھنا ہے ۔ افیسوں 5 باب اُسکی 18 آیت حکیم دتی ہے کہ ہم روُح سے بھرے جاتے ہیں ، تاہم یہ روح القدس سے بھرے جانے کے لیے دُعا نہیں ہے جو کہ اِس عمل کو پُورا کرتی ہے ۔ صرف خُدا کے حکموں کی تابعداری روح کو ہم میں کام کرنے کی اجازت دیتی ہے ۔ کیونکہ ہم ابھی تیک گناہ کے زیر اثر ہیں ، ہر وقت روح سے بھرا جانا ناممکن ہے ۔ جب ہم گناہ کرتے ہیں تو ہمیں چاہیے کہ جلدی سے خُدا کے سامنے تو یہ کریں اور روح القدس سے بھرنے جانے کے ہمارے معاہدے کو بحال کریں



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



میں روُح القدس کے ساتھ کس طرح بھر سکتا ہوں ؟