کیا نجات اکیلے ایمان کے ذریعہ ہے یا ایمان کے ساتھ عمل بھی شامل ہے؟



سوال: کیا نجات اکیلے ایمان کے ذریعہ ہے یا ایمان کے ساتھ عمل بھی شامل ہے؟

جواب:
اس طرح کے سوالات شاید اس لغے ضروری ہیں کیونکہ یہ تمام میسحی علم الہی کا سب سے اہم سوال ہے۔ یہ سوال اصلاح کاسبب بنتاہے جوکہ پروٹسٹنٹ کلیسیاؤں اور کیتھولک کلیسیاؤں کے درمیان ایک تفریق یا اختلاف پایا جاتاہے۔ یہ سوال بائبل کی مسیحیت اور مسیحی فرقوں کے درمیان ایک خاص فرق کی بنا پر ہے کہ کیا نجات اکیلے ایمان کے ذریعہ سے ہے یا ایمان کے ساتھ اعمال بھی شامل ہیں؟ کیا میں صرف یسوع پر اعتقاد رکھنے کے ذریعہ بچایا گیا ہوں یا پھر یسوع پر اعتقاد رکھنے کے لئے کچھ عمل بھی کرنے پڑیں گے؟

اکیلے ایمان کا سوال یا ایمان کےساتھ اعمال کے سوال کو کچھ ایسے لوگوں کے ذریعہ مشکل بنا دیا گیا ہے جو کلام پاک کی عبارتوں سے میل کھاتے ہیں۔ رومیوں 3:28، 5:1 اور گلیتوں 3:24 کا موازنہ یعقوب 2:24 سے کریں۔ کچھ پولس کے اس بیان سے کہ (نجات صرف ایمان سے ہے) فرق پاتے ہیں یعقوب کے اس بیان سے کہ (نجات ایمان کے ساتھ اعمال سے ہے)۔ پولس تحکمانہ انداز سے کہتا ہے کہ تم کو ایمان کے وسیلہ سے فضل ہی نجات ملی ہے۔ (افسیوں 9-8 :2), جبکہ یعقوب کہتاہے کہ انسان صرف ایمان ہی سے نہیں بلکہ اعمال سے راستباز ٹھہرتا ہے۔ اس نمایاں پریشانی کا حل اس بات کو جانچنے کے ذریعہ کیاجاسکتا ہے کہ یعقوب حقیقت میں کس کی بابت بات کر رہا ہے۔ یعقوب اس اعتقاد کو جھوٹا ٹھہراتا ہے جو ایک شخص نیک کاموں کو ظاہر کئے بغیر ایمان رکھے (یعقوب 18-17: 2)۔ یعقوب اس بات پر زور دیتا ہے کہ مسیح پراصلی ایمان زندگی کی تبدیلی اور اچھے اعمال انجام دینےکی چاہت کو لے آئے گا (یعقوب 26-20 :2)۔ یعقوب یہ نہیں کہہ رہا ہے کہ انسان صرف ایمان ہی سے بلکہ اعمال سے بھی راستبازٹھہرتا ہے بلکہ یقینی طور سے ایک شخص جو کہ سچ مچ ایمان سے راستباز ٹھہرایا گیا ہے اس کی اپنی زندگی میں بھی نیک اعمال پائے جائیں گے۔ اگر ایک شخص سچاایماندار ہونے کا دعوی کرتاہے اور اسکی زندگی میں نیک اعمال نہ پائے جائيں تو پھر وہ ویسا شخص ہے جس میں مسیح پر سچا ایمان نہیں ہے (یعقوب 26، 20، 17، 14 :2)۔

پولس رسول بھی یہی بات اپنی تحریروں میں کہتا ہے۔ گلیتوں 23-22 :5 میں ایمانداروں کی زندگیوں میں اچھے پھل ہونے کی فہرست دی گئی ہے۔ ان باتوں کو کہنے کے فورا بعد وہ ہم سے کہتاہے کہ ہم کو نجات ملی ہے نہ کہ اعمال کے سبب سے (افسیوں 9-8 :2)، پولس ہم کو اطلاع کرتاہے کہ ہم ان نیک اعمال کے واسطے مخلوق ہوئے جن کو خدا نے پہلے سے ہمارے کرنے کے لئے تیار کیا تھا (افسیوں 2:10)۔ زندگی کی تبدیلی کے لئےپولس اتنا کچھ امید کرتاہے جتنا کہ یعقوب کرتا ہے۔ چنانچہ وہ کہتا ہے ۔ "اس لئے اگر کوئی مسیح میں ہے تو وہ نیا مخلوق ہے۔ پرانی چیزیں جاتی رہیں دیکھو وہ نئی ہو گئیں" (2 کرنتھیوں 5:17) یعقوب اور پولس نجات سے متعلق اپنی تعلیم میں غیر متفق نہیں ہیں بلکہ وہ ایک ہی موضوع کو فرق نظریہ سے پیش کر رہے ہیں۔ پولس سیدھے سادھے طریقہ سے زور دیتا ہے کہ راستبازی اکیلے ایمان سے ہے جبکہ یعقوب اس حقیقت پر زور ڈالتا ہے کہ مسیح پر اصلی ایمان نیک اعمال پیدا کرتا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



کیا نجات اکیلے ایمان کے ذریعہ ہے یا ایمان کے ساتھ عمل بھی شامل ہے؟