كيا يسوع خدا هے؟ كيا يسوع نے كبھي دعويٰ كيا هے كه وه خدا هے؟




سوال: كيا يسوع خدا هے؟ كيا يسوع نے كبھي دعويٰ كيا هے كه وه خدا هے؟

جواب:
یسوع کو کبھی بھی کلامِ مقدس میں ٹھیک ایسے الفاظ میں تحریر نهیں کیا گیاکه ، "میں خدا هوں"۔ اس کے باوجود اس کا یه مطلب نهیں، اس نے دعویٰ نهیں کیاکه وه خدا هے۔ "یسوع "کے الفاظ کی مثال لیتے هیں یوحنا10باب30آیت، "میں اور باپ ایک هیں"۔ پهلی نظر میں ، ایسا دکھائی نهیں دیتا که وه خدا هونے کا اعلان کرتے هیں۔ اس کے برعکس ، اس کے بیان پر یهودیوں کا ردِ عمل دیکھیں، "اچھے کام کے سبب سے نهیں بلکه کفر کے سبب سے تجھے سنگسار کرتے هیں اور اس لئے که تُو آدمی هوکر اپنے آپ کو خدا بناتا هے" ﴿یوحنا 10باب33آیت﴾۔ یهودی سمجھتے تھے که یسوع کا بیان خدا هونے کا دعویٰ هے۔ ذیل میں دی گی آیات میں یسوع یهودیوں کی تصیح نهیں کرتے ، "میں خدا هونے کا دعویٰ نهیں کرتا"۔ جو ظاهر کرتا هے که یسوع حقیقی طور پر اعلانیه کهه رهے تھے که خدا تھا، "میں اور باپ ایک هیں"﴿یوحنا10باب30آیت﴾۔ یوحنا8باب 58 آیت ایک اور مثال هے ،" یسوع نے کها، میں تم سے سچ سچ کهتا هوں که پیشتر اس سے که ابرہام پیدا هوا میں هوں"دوباره ، اس کے جواب میں، یهودیوں نے یسوع کو مارنے کے لئے پتھر اُٹھائے﴿یوحنا8باب59آیت﴾۔ کیونکه یهودی یسوع کو سنگسار کرنا چاهتے تھے اگر وه ایسا نهیں کهتا جو ان کے ایمان کے مطابق گستاخی هو، نام لینے سے، خدا هونے کا دعویٰ؟

یوحنا1باب1آیت کهتا هے که "کلام خدا تھا"۔ یوحنا1باب14آیت کهتا هے که "کلام مجسم هوا "۔ یه واضع طور پر ظاهر کرتا هے که یسوع هی انسانی شکل میں خدا هے۔ اعمال 20باب28آیت همیں بتاتی هے ، ..."پس اپنی اور اس سارے گله کی خبرداری کرو جس کا روح القدس نے تمهیں نگهبان ٹھرایا تاکه خدا کی کلیسیا کی گله بانی کروجسے اس نے خاص اپنے خون سے مول لی۔ کس نے کلیسیا کو اپنے خون سے خریدا؟ یسوع مسیح۔ اعمال 20باب28آیت اعلان کرتا هے که خدا نے کلیسیا کو خاص اپنے خون سے مول لئے۔ اسلئے ، یسوع خدا هے

توما رسول یسوع کے بارے میں اعلان کرتا هے ، "اے میرے خداوند اے میرے خدا"﴿یوحنا 20باب28آیت﴾۔ یسوع نے اس کی اصلاح نه کی ۔ ططس2باب13آیت هماری حوصله افزائی کرتی هے که هم انتظار کریں اپنے خداوند اور نجات دهنده کے آنے کاجو کہ یسوع مسیح ہے ﴿دیکھیں 2۔پطرس1باب1آیت﴾۔ عبرانیوں1باب8آیت میں باپ یسوع کا اعلان کرتا هے، "مگر بیٹے کی بابت وه کهتا هے که ، اے خدا تیرا تخت ابدالآباد رهے گا اور تیری بادشاهی کا عصا راستی کا عصا هے"۔ باپ خود بیٹے کو مخاطب کرتا ہے ۔اے خدا ۔کہہ کر ۔ جو کہ یہ ظاہر کرتا ہے کہ یسوع خدا ہے۔

مکاشفه کی کتاب میں ، ایک فرشته نے یوحنا رسول کو صرف خدا کی عبادت کرنے کی تعلیم دی ﴿مکاشفه 19باب10آیت﴾۔ کئی بار کلامِ مقدس میں یسوع کی عبادت کی گئی اور یسوع نے اُس عبادت کو قبول کیا تھا ﴿متی2باب11آیت؛ 14باب33آیت؛ 28باب9اور17آیت؛ لوقا24باب52آیت؛ یوحنا9باب38آیت﴾۔ اس نے کبھی ملامت نهیں کی اور نہ ہی اُن کو منع کیا جو اس کی عبادت کرتے هیں۔ اگر یسوع خدا نهیں تھا، وه لوگوں کو بتا سکتا تھا که میری عبادت نه کرو، جسے فرشتے نهیں مکاشفه میں کها۔ یهاں بهت سے حواله جات هیں جو یسوع کو ابدی خدا ثابت کرنے کی دلیل دیتے هیں۔

سب سے زیاده ضروری وجه یسوع کے خدا هونے کی یه هے که اگر وه خدا نهیں هے ، اس کی موت ناکافی هے ساری دنیا کے گناهوں کا کفاره ادا کرنے کے لئے ﴿1۔یوحنا2باب2آیت﴾۔ صرف خدا هی اس بے انتہا کفارے کو ادا کرسکتا هے۔ صرف خدا هی دنیا کے گناهوں کو اٹھا سکتا هے ﴿2۔کرنتھیوں5باب21آیت﴾، مرنا، اور جی اُٹھنا اس کی موت اور گناه پر فتح ثابت کر رها هے



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



كيا يسوع خدا هے؟ كيا يسوع نے كبھي دعويٰ كيا هے كه وه خدا هے؟