نجات کے منصوبہ یا نجات کا راستہ کیا ہے؟



سوال: نجات کے منصوبہ یا نجات کا راستہ کیا ہے؟

جواب:
کیا آپ بھوکے ہیں؟ جسمانی طور سے بھوکے نہیں، بلکہ اس کے علاوہ کیاآپ کی زندگی میں اس بھوک سے زیادہ کوئی اور بھوک ہے؟ کیاآپ کی اندرونی شخصیت کی گہرائی میں ایسا کچھ ہے جس سے آپ کبھی آسودہ نہیں ہیں؟ اگر ایسا ہے تو صرف یسوع اس کا راستہ ہے! یسوع نے کہا "زندگی کی روٹی میں ہوں۔ جو میرے پاس آئے گا وہ کبھی بھوکا نہیں ہوگا، اور جو مجھ پر ایمان لاتاہے وہ کبھی پیاسا نہیں ہوگا" (یوحنا 6:35)۔

کیا آپ الجھن میں ہیں؟ کیا آپ کو زندگی میں کبھی کوئی راستہ یا جینے کا مقصد نظر نہیں آتا؟ کیا آپ کو ایسا لگتاہے کہ کسی نے آپکی طرف چمکنے والی روشنی کو گل کر دیا ہو، بجھا دیا ہو اور آپ دبانے والا بٹن یا سوئچ نہیں ڈھونڈ پا رہے ہوں؟ اگر ایسی بات ہے تو یسوع اس کا حل ہے، راستہ ہے! اس نے دعوی کیاہے کہ "دنیا کا نور میں ہوں جو کوئی میرے پیچھے چلے گا وہ اندھیرے میں نہ چلے گا بلکہ ہمیشہ کی روشنی پائے گا" (یوحنا 8:12)۔

کیا آپ نے کبھی ایسا محسوس کیا ہے کہ آپ زندگی سے بندھے ہوئے ہیں؟ کیا آپ نے کئی ایک دروازے کھٹکھٹائے اور پایا کہ ان کے پیچھے سب کچھ خالی اور بے مطلب ہیں؟ کیا آپ ایسے دروازہ کی تلاش میں ہیں جس میں آپکو بھر پوری کی زندگی ملے؟ اگر ایسی بات ہے تویسوع اس کا حل ہے، راستہ ہے۔ یسوع مسیح نے دعوی کیا کہ "دروازہ میں ہوں۔ جوکوئی میرے وسیلہ سے اندر داخل ہو گا نجات پآئے گا۔اور اندر باہر آیا جایاکرے گا۔اور چارہ پائے گا۔ (یوحنا 10:9)۔

کیا دوسرے لوگ آپ کو ہمیشہ نیچا دکھاتے ہیں؟ کیا آپ لوگوں کی نظر میں حقیر گنے جاتے ہیں؟ کیا آپ کے رشتے کھوکھلے اور خالی ہیں؟ کیا آپ کو ایسا لگتا ہے کہ ہر کوئی آپ کا استعمال کرناچاہتا ہے؟ اگر ایسا ہے یسوع اس کا حل ہے، وہ راستہ ہے۔ یسوع نے کہا "اچھا چرواہا میں ہوں۔ اچھا چرواہااپنی بھیڑوں کے لئے جان دیتا ہے۔ اچھا چرواہا میں ہی ہوں؛ میں اپنی بھیڑوں کو جانتا ہوں اور میری بھیڑیں مجھے اور میری آواز کو پہچانتی ہیں" (یوحنا 14، 11 :10)۔

کیا یہ سوچ کر آپ تعجب کرتے ہیں کہ اس زندگی کے بعد کیا ہونے والا ہے؟ کیا آپ اپنی زندگی سے تنگ آچکے ہیں یہ سوچ کر کہ ساری چیزیں سڑن یا زنگ کی مانند ہیں؟ کیاآپ کبھی کبھی شک کرتے ہیں کہ زندگی کوئی معنی نہیں رکھتی؟ کیا آپ مرنے کے بعد جینا چاہتے ہیں؟ اگر ایسی بات ہے تو یسوع اس کا حل ہے۔ ایک راستہ ہے۔ یسوع نے دعوی کیا ہے کہ "قیامت اور زندگی تو میں ہوں۔ جو مجھ پرایمان لاتاہے گر وہ مر بھی جائے تو بھی زندہ رہے گا۔اور جو کوئی زندہ ہے اور مجھ پر ایمان لاتا ہے وہ ابد تک کبھی نہ مرے گا" (یوحنا 26-25 :11)

راستہ کیا ہے؟ سچائی کیا ہے؟ زندگی کیا ہے؟ یسوع نے جواب دیا "راہ حق اور زندگی میں ہوں، کوئی میرے وسیلہ کے بغیر باپ کے پاس نہیں آ سکتا"(یوحنا 14:6)

جس بھوک کا آپ احساس کرتے ہیں وہ روحانی بھوک ہے اور یہ صرف یسوع کے ذریعہ مٹائی جا سکتی ہے۔ صرف یسوع ہی ہے جو آپ کی زندگی سے تاریکی کو دور کر سکتا ہے۔ یسوع آسودہ زندگی کا دروازہ ہے۔ یسوع ایک ایسا دوست اور چرواہاہے جس کی آپ کو تلاش تھی۔ یسوع موجودہ جہان اور آنے والے جہان میں آپ کے لئے زندگی ہے۔ یسوع نجات کا راستہ ہے!

یہی سبب ہے کہ آپ بھوک کا احساس کرتے ہیں، یہی سبب ہے کہ آپ خود کو تاریکی میں کھو یا ہوا محسوس کرتے ہیں، یہی سبب ہے کہ زندگی آپ کے لئے کوئی معنی نہیں رکھتی۔ یہی سبب ہے کہ آپ خدا سے الگ کئے ہوئے ہیں۔ کلام پاک کہتاہے کہ ہم سب نے گناہ کیا ہے اور اس لئے خدا سے جدا ہیں (واعظ 7:20؛ رومیوں 3:23)۔

خالی پن اور شون آپ اپنے دل میں محسوس کرتے ہیں کیا آپ جانتے ہیں کہ یہ شون اور خالی پن کیا ہے؟ یہ ہے آپ کے دل میں خداکو ساتھ نہ پانا۔ یعنی خدا کی کمی کو محسوس کرنا۔ ہم کو اس لئے بنایا گیا تھا کہ ہم اپنےخالق خدا سے رشتہ قائم رکھیں۔ مگر گناہ کی وجہ سے ہم اس رشتہ سے الگ ہوگئے۔ یہاں تک کہ ہماری حالت بد سے بد تر ہو گئی۔ اگر ابھی یہ حال ہے تو مرنے کے بعد بھی ابدیت میں ہمارا گناہ ہم کو خدا سے جدا ہونے کا سبب ثابت ہو گا (رومیوں 6:23؛ یوحنا 3:36)۔

اس مسئلہ کو کیسے حل کیا جا سکتا ہے؟ یسوع ہی ایک راہ ہے! یسوع نےہمارے گناہ اپنے او پر لے لئے (2 کرنتھیوں 5:21)۔ یسوع ہماری جگہ پر مرا (رومیوں 5:8) اس سزاکو اٹھاتے ہوئے جس کے ہم حقدار تھے۔ تین دن کے بعد یسوع مردوں میں سے زندہ ہوا یہ ثابت کرتے ہوئے کہ اس نے گناہ اور موت پر فتح حاصل کی ہے۔ (رومیوں 5، 4 :6)۔ اس نے ایسا کیوں کیا؟ یسوع نے خود ہی اس سوال کا جواب پیش کیا؛ "اس سے زیادہ محبت کوئی شخص نہیں کرتا کہ اپنی جان اپنے دوستوں کے لئے دیدے" (یوحنا 15:13)۔ یسوع ہمارے لئے مارا گیا تاکہ ہم جئیں۔اگر ہم یسوع پر ایمان لاتے ہیں تو ہمارے گناہوں کی قیمت بطور اس کی موت پر بھروسہ کرتے ہیں تو ہمارے تمام گناہ معاف کئے جاتے اور دھو دئے جاتے ہیں۔ تب پھر ہماری روحانی بھوک مٹائی جاتی ہے۔ زندگی میں روشنی پھیلنے لگتی ہے۔ بھرپوری کی زندگی کے لئے ہماری پہنچ ہونے لگے گی۔ ہم اپنے بہترین سچے اور اچھے دوست اور اچھے ‍چرواہے کو جاننے اور پہچاننے لگیں گے۔ ہم جانیں گے کہ مرنے کےبعد زندگی ضرور ہو گی۔ یعنی جنت میں ابدیت کے لئے یسوع کے ساتھ زندگی جینے کا تجربہ۔

"کیونکہ خدا نے دنیا سے ایسی محبت رکھی کہ اس نے اپنا اکلوتا بیٹا بخش دیاتاکہ جو کوئی اس پر ایمان لائے وہ ہلاک نہ ہو بلکہ ہمیشہ کی زندگی حاصل کرے" (یوحنا 3:16)۔

جو بھی کچھ آپ نے یہاں پڑھا ہے اس کی بنیاد پر کیا آپ نے مسیح کے لئے فیصلہ لیا ہے؟ اگر آپکا جواب ہاں میں ہے تو برائے مہربانی اس جگہ پر کلک کریں جہاں لکھا ہے کہ آج میں نے مسیح کو قبول کر لیا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



نجات کے منصوبہ یا نجات کا راستہ کیا ہے؟