کیا ايك بار نجات هميشه كے لئے نجات؟




سوال: کیا ايك بار نجات هميشه كے لئے نجات؟

جواب:
ایک بار کوئی شخص جب نجات حاصل کر لیتا هے توکیا وه همیشه کے لیے نجات پا لیتا هے؟ جب لوگ مسیح کو اپنے نجات دهنده کے طور پر جان لیتے هیں، تو وه خداکے ساتھ ایک رشتے میں منسلک ہو جاتے هیں جو ان کی ابدی نجات کو محفوظ کرنے کی ضمانت دیتا هے۔ کلامِ مقدس کے بهت سے حوالے اس حقیقت کا اعلان کرتے هیں، ﴿ا﴾رومیوں8باب30آیت اعلان کرتا هے، "اور جن کو اس نے پهلے مقرر کیا ان کو بلایا بھی اور جن کو بلایا ان کو راستباز بھی ٹھهرایا اور جن کو راستباز ٹھهرایاانکو جلال بھی بخشا"۔ یه آیت بتاتی هے که جس لمحے خدا همیں چنتا هے، یه ایسے هی هے جیسے هم آسمان میں اسکے موجودگی میں اسکی تمجید کرتے هیں۔ یهاں پر کچھ بھی نهیں جو ایک ایماندار کو باز رکھ سکے جلالی هونے سے کیونکه خدا پهلے هی سے اسے فردوس میں رکھنے کا اراده رکھتا هے۔ ایک بار جب ایک شخص راستباز ٹھهرا، تو اسکی نجات کی ضمانت دے دی گئی وه ایسے هی محفوظ هے جیسے اگر وه پهلے فردوس میں جلالی تھا۔

﴿ب﴾پولوس رومیوں 8باب33تا34آیت میں دو فیصله کن سوالات پوچھتاهے ، "خدا کے برگزیدوں پر کون نالش کریگا؟ خدا وه هے جو ان کو راستباز ٹھهراتا هے۔ کون هے جو مجرم ٹھهرائے گا؟ مسیح یسوع وه جو مر گیابلکه مردوں میں سے بھی جی اُٹھا اور خدا کی دهنی طرف هے اور هماری شفاعت بھی کرتا هے"۔ خدا کے برگزیدوں پر کون نالش کریگا؟ کوئی نهیں کریگا کیونکه مسیح همارا مشیر هے۔ کون هم کو مجرم ٹھهرائے گا؟ کوئی نهیں، کیونکه مسیح جو همارے لئے مُوا، جو همارے لئے رد کیا گیا ۔ هم مشیر اور منصف دونوں رکھتے هیں جیسے همارا نجات دهنده۔

﴿پ﴾ایماندارروحانی طور پر دوباره پیدا هوتے هیں﴿پھر پیدا هونا﴾جب وه ایمان لاتے هیں ﴿یوحنا3باب3آیت؛ ططس3باب5آیت﴾۔ ایک مسیحی کے لئے اپنی نجات کھو دینا، ایسے هی ہے که دوباره پیدا هی نهیں هوا هو گا۔ کلامِ مقدس میں کوئی ایسی شهادت نهیں ملتی که نئی پیدائش کھو دی جا سکتی هے۔ ﴿ت﴾پاک روح تمام ایمانداروں کے اندر رهتا هے ﴿یوحنا14باب17آیت؛ رومیوں8باب9آیت﴾ اور مسیح کے جسم میں تمام ایمانداروں کو بپتسمه دیتا هے ﴿1۔کرنتھیوں12باب13آیت﴾۔ ایماندار کے لئے غیر نجات یافته بننا ایسے هی جیسے وه "باهر نکال"دئیے گئے اور مسیح کے جسم سے الگ کردئیے گئے ہوں۔

﴿ٹ﴾یوحنا3باب15آیت بیان کرتی هے که جوکوئی یسوع مسیح پر ایمان لاتا هے "ابدی زندگی پائے گا"۔ اگر آپ آج مسیح پر ایمان لاتے هیں اور ابدی زندگی رکھتے هیں، لیکن کل کھو دیتے هیں، پھر یه کبھی بھی ابدی نهیں تھی۔ تاهم اگر آپ اپنی نجات کھو دیتے هیں، تو کلامِ مقدس میں ابدی زندگی کا وعده غلط هوگا۔ ﴿ث﴾سب سے زیاده فیصله کن دلیل میرے خیال میں کلامِ مقدس خود بهتر بیان کرتا هے، "کیونکه مجھ کو یقین هے که خدا کی جو محبت همارے خداوند مسیح یسوع میں هے اس سے هم کو نه موت جدا کرسکیگی نه زندگی۔ نه فرشتے نه حکومتیں۔ نه حال کی نه استقبال کی چیزیں۔ نه قدرتیں نه بلندی نه پستی نه کوئی اور مخلوق"﴿رومیوں8باب38تا39آیت﴾۔ یاد رکھیں ایک هی خدا نے آپ کو نجات دی هے اور ایک هی خدا آپ کو بچائے گا۔ ایک بار هم نجات پاتے هیں تو همیشه کے لئے نجات پاتے هیں۔ هماری نجات یقینا ابدی طور پر محفوظ هے.



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



کیا ايك بار نجات هميشه كے لئے نجات؟