ایک مسیحی کیا ہے؟



سوال: ایک مسیحی کیا ہے؟

جواب:
ایک مسیحی کے لئے ڈکشنری کی تعریف ویسی ہی ہے جیسے "ایک شخص یسوع کو مسیح بطور اعتقاد رکھتا ہے یا پھر یسوع کی تعلیم کی بنیاد پر اس کی راہوں پر چلتا ہے"۔ جبکہ یہ ایک اچھی شروعات ہے۔ کئی ایک ڈکشنری کی پہچان کی طرح بائیبل کی سچائی کو پوری طرح سے سمجھا نہیں پاتا کہ ایک مسیحی ہونےکے کیا معنی ہیں۔ نئے عہدنامے میں تین مرتبہ مسیحی کا لفظ استعمال کیا گیا ہے (اعمال 11:26؛ 26:28؛ 1 پطرس 4:16)۔ یسوع مسیح کے شاگرد سب سے پہلے انطاکیہ میں مسیحی کہلائے (اعمال 11:26)۔ اس لئے کہ ان کا برتاؤ، سرگرمیاں اور ان کے بول چال سب مسیح کے جیسے تھے۔ لفظ مسیحی کے لفظی معنی ہیں "مسیح کے جھنڈ یا گروہ سے تعلق رکھنا" یا "مسیح کا ایک شاگرد ہونا"۔

وقت کے گزرتے بدقسمتی سے لفظ "مسیحی" کی پہچان میں بھاری نقصان ہونے لگا ہے اور اکثراس لفظ نے ایک دوسری پہچان اختیار کر لی ہے جیسے کہ ایک مذہب پرست یا دین کی قدر کرنے والا جو کہ یسوع مسیح کا شاگرد ہو بھی سکتا ہے یا نہیں بھی۔ بہت سے نام دھاری عیسائی ایسے ہیں جو یسوع مسیح پر بھروسا نہیں کرتے پھر بھی وہ خود کو مسیحی ہونےکا دعوی کرتے ہیں۔ صرف اس لئے کہ وہ چرچ جاتے ہیں یا مسیحی معاشرہ کے درمیان رہتے یا مسیحی ملک یا قوم کے باشندے ہیں۔ مگر چرچ جانا، بائیبل رکھنا، اپنے سے غریب کی مدد کرنا، گلے میں صلیب لٹکانا یا اچھے انسان بنے رہنا آپ کو مسیحی نہیں بنا تا جیسے کہ گیراج میں جانے سے آپ موٹر کار یا خود متحرک نہیں بن جاتے۔ یہاں تک کہ آپ کسی چرچ کے ممبر بن جانے سے، لگاتار عبادت میں شریک ہونے یا باقاعدہ چندہ یاہدیہ دینے سے بھی آپ میسحی نہیں کہلا سکتے۔

کلام پاک ہمیں سکھاتاہے کہ جو بھلے کام ہم کرتےہیں وہ خدا کے حضور قبول یافتہ نہیں ہیں۔ اس سے خدا خوش نہیں ہوتا۔ ططس 3:5 کہتا ہے۔ "اس نے ہم کو نجات دی مگر راستبازی کے کاموں کے سبب سے نہیں جو ہم نے خود کئے بلکہ اپنی رحمت کے مطابق نئی پیدائش کے غسل سے اور روح القدس کے ذریعہ ہمیں نیا بنانے کے وسیلہ سے"۔ سو ایک مسیحی وہ ہے جو خدا سے نئی پیدائش حاصل کیا ہو (یوحنا 3:3؛ یوحنا 3:7؛ 1 پطرس 1:23) اور یسوع مسیح پر ایمان لایا ہو اور اس پر بھروسہ کیا ہو۔ افسیوں 2:8 ہم سےکہتا ہے کہ "تم کو ایمان کے وسیلہ سے فضل ہی نجات ملی ہے اور یہ تمہاری طرف سے نہیں بلکہ خدا کی بخشش ہے۔

ایک سچا مسیحی وہ شخص ہے جس نے یسوع مسیح کی شخصیت اور اس کے کاموں پر ایمان لا کر اس پر بھروسہ کیا ہے۔ ساتھ ہی اس کا یہ ایمان کہ اس نے صلیب پر ہمارے گناہوں کی قیمت ادا کرنے کے لئے اپنی جان دی۔ اور تیسرے دن مردوں میں سے جی اٹھا۔ یوحنا 1:12 ہم سےکہتا ہے کہ "جتنوں نے اسے قبول کیا اس نے انہیں خدا کے فرزند ہونےکا حق بخشا یعنی انہیں جو اس کے نام پر ایمان لاتے ہیں"۔ سچے مسیحی ہونےکی نشانی ہے دوسروں سے محبت رکھنا اور خدا کے کلام کی باتوں کو بجا لانا (1 یوحنا 10، 2:4)۔ ایک سچا مسیحی حقیقت میں خدا کا فرزند ہے، خدا کے سچے خاندان کا ایک حصہ ہے اور جس کو مسیح یسوع میں ایک نئی زندگی عطا ہوئی ہے۔

جو بھی کچھ آپ نے یہاں پڑھا ہے اس کی بنیاد پر کیا آپ نے مسیح کے لئے فیصلہ لیا ہے؟ اگر آپکا جواب ہاں میں ہے تو برائے مہربانی اس جگہ پر کلک کریں جہاں لکھا ہے کہ آج میں نے مسیح کو قبول کر لیا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



ایک مسیحی کیا ہے؟